حیدرآباد میں جنسی استحصال کامعاملہ ،ممبر پارلیمنٹ کا بیٹا گرفتار

جنسی استحصال کا معاملہ آئے دن بڑھتا ہی جارہا ہے۔ اس بارے میں ہم یہی کہہ سکتے ہیں ’’مرض بڑھتا گیا جوں جوں دوا کی‘‘ یعنی نر بھیا کے بعد اس زیادتی کو لے کر جتنا دھرنا و مظاہرہ ہوا تھا، اس کو تاریخ بھلا نہیں سکتی ہے۔ ہر طرف یعنی پورے عالم میں اس کی مذمت ہورہی تھی، گویا پورا ہندوستان سراپا احتجاج میں تبدیل ہوگیا تھا۔ اور حکومتی سطح پر اس کی مذمت کی گئی، اور قانون بھی بنایاگیا، لیکن جو ہوا، وہ آپ کے سامنے ہے۔ یعنی شاید جرم اور بڑھتا گیا۔ جنسی استحصال کا ایک اور معاملہ حیدرآباد میں پیش آیا ہے۔حیدرآباد میں حکمراں پارٹی ٹی آر ایس کے پارلیمانی رکن ڈی سری نواس کے بیٹے سنجے کو 12 لڑکیوں کے جنسی استحصال کے الزام میں گرفتار کر لیا گیا ہے۔ پولیس نے بتایا کہ گرفتاری کے بعد سنجے کوایک مقامی عدالت میں پیش کیا گیا جس نے اسے 24 اگست تک کے لئے عدالتی حراست میں بھیج دیا۔ نظام آباد کے اسسٹنٹ پولیس کمشنر ایم نے کہا کہ ،’’ سنجے پر 12 لڑکیوں کے جنسی استحصال اور کالج کیمپس اور دوسرے مقامات پر فحش سلوک کرنے کا الزام ہے‘‘۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest