اب لڑکی کو بھگاکر شادی کرنا بہت مہنگا ۔50 ہزار سے 3لاکھ تک کروانے پڑینگے جمع

پنجاب اور ہریانہ ہائی کورٹ نے یہ حکم جاری کیا ہے کہ  اگر کوئی لڑکا کسی لڑکی کو گھر سے بھگا کر شادی کرنا چاہتا ہے ، تواس لڑکے کو اب لڑکی کے نام پر بینک میں 50 ہزار سے لے کر تین لاکھ روپے تک جمع کروانے پڑیں گے۔ گھر سے بھاگ کر شادی کرنے کیلئے ہائی کورٹ نے کہا ہے کہ لڑکا پہلے لڑکی کے بینک اکاونٹ میں ایک مقررہ رقم جمع کروائے ۔ یہ رقم 50 ہزار سے تین لاکھ روپے تک ہوسکتی ہے۔ہائی کورٹ نے یہ فصلہ ان جوڑوں کے سلسلہ میں جاری کی ہے ، جو گھر سے بھاگ کر شادی کرنے کیلئے پولیس تحفظ کا مطالبہ کرتے ہیں۔ جسٹس پی بی بجنتھری نے 27 جولائی 2018 سے اب تک چار ایسی ہدایات جاری کی ہیں جن میں لڑکے سے لڑکی کے بینک اکاونٹ میں رقم جمع کروانے کیلئے کہا گیا ہے۔بھگا کر شادی کرنے والے لڑکوں کو اب لڑکیوں کے بینک اکاونٹ میں جمع کرانے ہوں گے پیسے ہرو رز20سے 30جوڑےاپنے والدین کے خلاف جاکر بھاگ کر شادی کرتےہیں ، جن میں کئی جوڑےاپنی حفاظت پانے کیلئے عدالت کا دروازہ کھٹکھٹاتے ہیں۔پہلے ہائی کورٹ عدم تحفظ کے دعووں کی جانچ کرنے کے بعد ہی کوئی فیصلہ سناتا تھا ، مگر گزشتہ کچھ وقت سے ہائی کورٹ نے ہدایت جاری کرکے لڑکی کے نام پر 50 ہزار سے تین لاکھ روپے تک جمع کروانے کا فیصلہ کیا ۔ یہ رقم ایک مہینے کے اندر تین سال کی مدت کیلئے جمع کروانی ہوگی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest

RSS
Follow by Email
Facebook
Twitter
Pinterest
LinkedIn
Instagram